یورپی تھذیب اور جاہل مذہبی لوگ

لیکن جاہل مذہبی لوگ نہیں مان رہے:
ان دونوں نے میری دس سالہ بیٹی کو نشے کا انجکشن لگایا، پھر اس کی عصمت دری  کی اور اس کے جسم کے ٹکڑے کر دیئے۔ میں یہ سب دیکھ رہی تھی اورمیں نے انہیں روکا بھی نہیں کیونکہ  مجھے اچھا لگ رہا تھا۔ اس کے بعد میں نے ان دونوں کے ساتھ ہوٹل میں کھانا کھایا اور پوری رات دونوں کے ساتھ انجوائے کرتی رہی‘
یہ بیان ایک روشن خیال اور مہذب عورت کا ہے جو  اپنی دس سالہ بیٹی کی عصمت دری اور قتل  میں ملوث تھی۔
روشن خیالی اور چم چماتی ایسی ہی مغربی تہذیب کی ہمیں بھی ضرورت ہے لیکن ہم جاہل ابھی تک مان نہیں رہے
http://policepicsandclips.com/mom-watched-daughters-rape-and-murder-before-having-sex-and-making-dinner-with-killer-2/