اتفاقا:

اتفاقا:
میں جا رہا تھا،اتفاق سے ایک ایسا شخص ملا ،جس نے مجھے نوکری دلوا دی.
آفس جاتے ہوئے ،اتفاقا بائیک سلپ ہوگئی،اور میں کیچڑ میں گر گیا،سارے کپڑے خراب ہوگئے.
اس طرح کے جملے اکثر آپ سن سنتے رہتے ہوں گے،مگر یاد رکھیے اتفاقا کچھ بھی نہیں ہوتا.
اگر کچھ اچھا ہوتا ہے، تو وہ اللہ کی طرف سے ہم پر احسان ہوتا ہے
اور
اگر کچھ برا ہوتا ہے،تو وہ ہمارے برے اعمال کیوجہ سے ہوتا ہے
اور
ہمیں غلطی کا احساس دلانے کے لیے ہوتا ہے.
قرآن کریم میں ہے:
"مَاۤ  اَصَابَکَ مِنۡ حَسَنَۃٍ  فَمِنَ اللّٰہِ ۫ وَ مَاۤ اَصَابَکَ مِنۡ سَیِّئَۃٍ  فَمِنۡ نَّفۡسِکَ"
جب تجھے کوئی بھلائی پہنچے تو (سمجھ کہ) وہ اللہ کی طرف سے ہے
اور
جب تجھے کوئی برائی پہنچے
تو (سمجھ کہ) وہ تیری اپنی طرف سے ہے
(النساء:79)

طالب دعا:
#احسان_اللہ کیانی