نماز کی رکعتوں کی تعداد میں شک

ایک صاحب نے یہ سوال پوچھا تھا:
سوال:
اگر غلطی سے نماز میں یاد نا رہے کی تیسری رکعت ہے یا چوتھی تو پھر بھی کیا سجدہ سہو کر سکتے ہین....  اور اگر غلطی سے یاد نا ہونے کی واجہ سے یاد آگیا کے یہ تو پانچویں رکعت پڑھ رہا ہوں....  تو کیا اس رکعت میں بھی سجدہ سھو کر سکتے ہیں....  پلیز مکمل رہمنمائی فرما دیں....  اللہ  آپ کو اجر عظیم عطا فرمائے.....

جواب پیش خدمت ہے:
جس کو تعداد رکعت میں شک ہو،اگر بلوغ کے بعد پہلی بار ہو ،تو نماز دوبارہ پڑھے.
اگر یہ شک پہلی بار نہیں ہوا ،بلکہ پہلے بھی ہوچکا ہے،تو جو غالب گمان ہو اس پر عمل کرے
(اس صورت میں سجدہ سھو نہیں ہے،لیکن اگر سوچنے میں ایک رکن کا وقفہ ہوا ،تو سجدہ سھو کرے)
اگر کسی طرف غالب گمان نہ ہو ،تو کم کی جانب کو اختیار کرے
یعنی اگر تین یا چار میں شک ہوا ہے ،تو تین قرار دے.
اگر دو یا تین میں شک ہے ،تو دو قرار دے.
اس صورت میں تیسری اور چوتھی دونوں میں قعدہ کرے،کیونکہ تیسری رکعت کا بھی چوتھی ہونے کا احتمال ہے.
اور چوتھی رکعت میں قعدے کے بعد سجدہ سھو کرکے سلام پھیر دے.

از
#احسان_اللہ کیانی