تازہ ترین
کام جاری ہے...
Sunday, May 14, 2017

اہل کتاب یھود و نصاری سے مسلمان کے نکاح کا شرعی حکم

May 14, 2017
اہل کتاب یھود و نصاری سے مسلمان کے نکاح کا شرعی حکم
یھودی اور عیسائی لڑکے سے مسلمان لڑکی کا نکاح کرنا جائز نہیں ہے ۔
البتہ
مسلمان لڑکا یھودی یا عیسائی لڑکی سے نکاح کر سکتا ہے ،مگر بہتر یہی ہے کہ ان سے نکاح نہ کیا جائے ۔
فتح القدیر میں ہے :
 " یجوز تزوج الکتابیات والاولی ان لا یفعل ولا یاکل ذبیحتھم الا للضرورۃ "
اہل کتاب عورتوں سے نکاح کرنا جائزہے ،لیکن بہتر یہی ہے کہ ان سے نکاح نہ کیا جائے ،نہ ہی ان کا ذبیحہ کھایا جائے ،سوائے( شدید) ضرورت کے ۔

اصل اختلاف اس میں ہے کہ موجودہ عیسائی اور یھودی اہل کتاب ہیں یا مشرکین ۔

اس میں علماء کرام کے دو گروہ ہیں :

پہلا گروہ :
کہتا ہے یہ اہل کتاب ہیں ۔
کیونکہ اللہ تعالی نے ان کے شرکیہ عقائد کو جانتے ہوئے ،ان کے احکام کو ،مشرکین کے احکام سے الگ بیان فرمایا ہے ،اور انھیں اہل کتاب کا نام دیا ہے ۔

دوسرا گروہ :
کہتا ہے ،یہ اہل کتاب نہیں ہیں ،بلکہ مشرکین ہیں ۔
کیونکہ اللہ تعالی نے سورت توبہ کی آیت نمبر تیس اور اکتیس میں فرمایا :
"وَقَالَتِ الْیَہُوْدُ عُزَیْرُ ابْنُ اللہِ وَقَالَتِ النَّصٰرَی الْمَسِیْحُ ابْنُ اللہِ"
یھود نے کہا :عزیز اللہ کا بیٹا ہے ،نصاری بولے مسیح اللہ کا بیٹا ہے
آخر میں فرمایا
"سُبْحٰنَہ عَمَّا یُشْرِکُوْنَ "
وہ اس شرک سے پاک ہے ۔
(التوبۃ ـ:
٣١۔٣٠)
دیکھیں
اللہ تعالی نے پہلے انکے شرکیہ اقوال بیان فرمائے ،پھر فرمایا :اللہ ان شرکیہ باتوں سے پاک ہے ۔
مبسوط میں ھے:
"یجب ان لا یاکلوا ذبائح اھل الکتاب اذا اعتقدوا ان المسیح الہ وان عزیرا الہ ولا یتزوجوا نساءھم وقیل علیہ الفتوی"
مسلمانوں پر لازم ھے،کہ وہ اھل کتاب کا ذبیحہ نہ کھائیں،جبکہ وہ یہ اعتقاد رکھتے ھوں،کہ مسیح اللہ کے بیٹے ھیں ،اور عزیر اللہ کے بیٹے ھیں،نہ ھی اس صورت میں انکی عورتوں سے نکاح کریں
کھا گیا ھے کہ اسی پر فقھاء کا فتوی ھے .
تحریر :احسان اللہ کیانی
14-05-2017




0 تبصرے:

Post a Comment

اردو میں تبصرہ پوسٹ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کر دیں۔


Translate in your Language

LinkWithin

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...
 
فوٹر کھولیں‌/بند کریں