بریلوی مسلک میں علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کی نا قدری

بریلوی مسلک نے جیتے جی اس شخص کی قدر نھیں کی،ساری زندگی یہ محتاجوں کی طرح زندگی گزارتا رھا ،نہ اس کی اولاد تھی ،نہ رشتہ دار تھے،جو اس کا خیال رکھتے.
اللہ بھلا کرے ،مفتی منیب الرحمن صاحب کا ،جو انھیں اپنے ساتھ جامعہ نعیمیہ ،کراچی لے گئے .
اور ان کے ساتھ بھرپور تعاون کیا
پھر انھوں نے سات جلدوں میں شرح صحیح مسلم لکھی
بارہ جلدوں میں تفسیر تبیان القرآن لکھی
سولہ جلدوں میں نعمۃ الباری کے نام سے صحیح بخاری کی شرح لکھی
دعا ھے،اللہ علامہ غلام رسول سعیدی صاحب کی بخشش و مغفرت فرمائے
اور مفتی منیب صاحب کو اجر عظیم عطا فرمائے .