میڈیا کی نفسیات

ہمارا میڈیا جو سیکولر نظام کا سب سے بڑا داعی ہے اس نظام کو سمجھنے کے لئے میڈیا کی نفسیات کا جاننا بھی ضروری ہے ، ہمارے میڈیا کا طریقہ واردات دیکھیں کہ پہلے تو گناہوں پر پر ابھارتا ہے، ناچ گانے دیکھا کر نوجوانوں کے جذبات کو برانگیختہ کرتا ہے ، شراب و کباب کے کلچر کو عام کرنے کی ہر ممکن سعی کرتا ہے، فحاشی و عریانی کو فروغ دیتا ہے لیکن جب اس منظم پروپیگنڈہ اور اشتہاری مہم سے متاثر ہوکر کوئی شخص گناہ کا ارتکاب کرلے تو یہ اس گناہ کو چھپاتا نہیں بلکہ اس شخص کو عالمی طور پر بدنام کردیتا ہے، اس کی عزت خاک میں ملادیتا ہے، مثلا ویلنٹائن ڈے پر ہمارا میڈیا عاشقی معشوقی کے پروگرام دیکھاتا ہے لیکن پھر کوئی نوجوان لڑکی کو چھڑ بیٹھے اور وہ میڈیا کے ہتھے چڑھ جائے تو میڈیا سرعام اسے رسوا کردیتا ہے ، اس کی ویڈیو بنا کر پوری دنیا میں دیکھائی جاتی ہے.

تحریر: کاپی شدہ