Sunday, December 20, 2015

چالیس احادیث مبارکہ اردو میں کاپی کریں ،وال پیپرز بنا کر شیر کریں


تمھید :
بسم اللہ والحمد للہ والصلوۃ والسلام علی رسول اللہ۔۔۔۔۔۔امابعد!
چالیس حدیث کے بارے میں حضور نے فرمایا :قَالَ رَسُولُ اللہِ صَلَّی اللَّہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ: " مَنْ حَفِظَ عَلَی أُمَّتِی أَرْبَعِینَ حَدِیثًا فِیمَا یَنْفَعُہُمْ مِنْ أَمْرِ دِینِہِمْ بُعِثَ یَوْمَ الْقِیَامَۃِ مِنَ الْعُلَمَاء (شعب الایمان :١٥٩٦) جس نے میری امت کے دینی فائدہ کے لیے چالیس احادیث کو محفوظ کیا اللہ تعالی اسے قیامت کے دن علماء میں سے اٹھائے گا (شعب الایمان )اسی جذبے کے تحت علماء کرام نے طرح طرح کی چالیس احادیث کو جمع کیا جسے اربعین کہتے ہیں ،مام رازی نے چالیس مسئلے جمع کر دیے ،کسی نے ایسے لکھی اربعین کے چالیس مختلف راوی ،کسی نے چالیس ابواب میں احادیث جمع کی ،کسی نے کیسے کسی نے کیسے ، اللہ سب کی دینی خدمت قبول فرمائے،ہم نے بھی اسے جذبہ کے تحت مختلف موضوعات پر چالیس احادیث جمع کی جو عوام کے لیے زیادہ فائدہ مند تھا ،ہر حدیث پر ایک عنوان بھی قائم کر دیا ،کسی مقام پر فائدہ لکھ کر کچھ باتیں بھی لکھ دی ،اللہ سے دعا ہے مصطفی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے صدقے یہ خدمت قبول فرمائے ۔

افضل ذکر اور بہترین دعا سورت فاتحہ ہے :۔۔۔۔۔۔
(١)۔۔۔۔۔۔افضل ذکر لا الہ الا اﷲ اور بہترین دعا الحمد ﷲہے (ترمذی ،ابن ماجہ )
فائدہ:کیونکہ الحمد للہ میں پہلے اللہ کی تعریف ،پھر خشوع و تذلل کو طلب حاجت سے مقدم کیا گیا ہے یہی بہترین دعا کا طریقہ ہے۔
٭٭٭٭
عرش کا خزانہ:۔۔۔۔۔۔
(٢)۔۔۔۔۔۔لاحَوْلَ وََلا قُوَّۃَ اِلا بِاﷲِ یہ جنت کے خزانوں میں سے ایک خزانہ ہے (بخاری ،مسلم ،ابن ماجہ )
()۔۔۔۔۔۔جو شخص ایک دن میں سو مرتبہ ''سُبْحَانَ اﷲِ وبِحَمْدِ ہِ ''پڑھتا ہے ،اس کے تمام (صغیرہ) گناہ معاف کر دیئے جاتے ہیں ،اگرچہ سمند ر کی جھاگ کے برابر ہوں (بخاری ،مسلم ،ترمذی ،نسائی )
()۔۔۔۔۔۔اے ابن آدم اگر تو میری عبادت کے لیے فارغ نہیں ہوگا ،تو میں تیر ے ہاتھ کام کاج سے بھر دوں گااور تیری محتاجی کبھی ختم نہیں کروں گا (ترمذی ،ابن ماجہ ،مسند احمد ،مستدرک )
()۔۔۔۔۔۔دو کلمے زبان پر ہلکے ،میزان میں بھاری ،رحمن کو محبوب ہیں
ــ''سُبْحَانَ اﷲ ِ وَ بِحَمْدِہِ''''سُبْحَانَ اﷲِ العَظِیْم ''(بخاری ،مسلم ،ترمذی ،ابن ماجہ ،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔بے شک اللہ تعالی تمہاری شکلوں اور تمہاے مال کو نہیں دیکھتا ،بلکہ وہ تمہارے دلوں اور تمہارے اعمال کو دیکھتا ہے (مسلم ،ابن ماجہ ،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔جب دو مسلمان تلوار کے ساتھ آپس میں لڑیں تو قاتل و مقتول دونوں جہنم میںجانے والے ہیں (بخاری ،مسلم ،ابن ماجہ)
()۔۔۔۔۔۔نیۃ المومن خیر من عملہ وعمل المنافق خیر من نیتہ مومن کی نیت اس کے عمل سے بہتر ہے اور منافق کا عمل اس کی نیت سے بہتر ہے (طبرانی کبیر ،شعب الایمان ،مجمع الزوائد)
()۔۔۔۔۔۔دنیا سے بے رغبت ہو جاؤ ،اللہ تم سے محبت کرے گا (ابن ماجہ ،مستدرک ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔دنیا سے محبت غم و حزن میں اضافہ کرتی ہے ،اور فحش کلامی دل کو سخت کر دیتی ہے (مسند شھاب )
()۔۔۔۔۔۔دنیا سے بے رغبتی دل اور جسم کو سکون بخشتی ہے (طبرانی کبیر )
()۔۔۔۔۔۔اگر تم اللہ تعالی پر کامل بھروسہ کرو تو اللہ تعالی تمھیں ایسے رزق دے گا ،جیسے پرندوں کو رزق دیتا ہے (ترمذی ،ابن ماجہ ،مستدرک ،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔جو صدق دل سے شھادت طلب کرے ،اللہ تعالی اسے مقام شھادت عطافرمائے گا ،اگرچہ وہ بستر پر ہی فوت ہو جائے (مسلم ،نسائی ،ابوداؤد،ابن ماجہ )
()۔۔۔۔۔۔جنت میں لے جانے والا کون سا عمل ہے ،آپ نے فرمایا: سچ بولنا (مسند احمد ،ترغیب )
()۔۔۔۔۔۔دین میں مخلص ہو جاؤ ،تمھیں تھوڑا عمل بھی کافی ہوگا (مستدرک ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔اللہ تعالی قیامت کے دن فرمائے گا ،میری وجہ سے ایک دوسرے سے محبت کرنے والے کہاں ہیں (مسلم ،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔افضل ترین عمل اللہ تعالی کے لیے محبت کرنا اور اللہ کے لیے نفرت کرنا ہے (ابوداؤد،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔اللہ تعالی فرماتا ہے اگر بندہ کسی جماعت میں میرا ذکر کرے تو میں اس سے بہتر جماعت (یعنی فرشتوں )میں (اپنی شان کے لائق )اس کا ذکر کرتاہوں (بخاری ،مسلم ،ترمذی ،ابن ماجہ )
()۔۔۔۔۔۔قیامت کے دن اللہ تعالی کے نزدیک درجہ میں افضل لوگ کثرت سے اللہ کا ذکر کرنے والے مرد اور عورتیں ہیں (ترمذی ،مسند احمد ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔اگر میرا بندہ دنیا میں مجھ سے خوف رکھے گا ،تو میں اسے قیامت کے روز امن میں رکھوں گا ،اور اگر وہ مجھ سے دنیا میں بے خوف رہا تو میں اسے قیامت کے روز خوف میں مبتلاکروں گا (صحیح ابن حبان)
()۔۔۔۔۔۔قرآن پڑھا کرو کیونکہ یہ قیامت کے دن اپنے پڑھنے والوں کی شفاعت کرے گا (مسلم ،مسند احمد ،ابن حبان ،طبرانی اوسط )
()۔۔۔۔۔۔وہ کامیاب ہو گیا ،جو اسلام لایااور بقدر کفایت رزق ملا اور اللہ نے اسے دیے ہوئے رزق پر قناعت کی دولت عطا فرمائی (مسلم ،ترمذی ،مستدرک ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔توبہ کرنے والا اس شخص کی طرح ہے ،جس نے کوئی گناہ ہی نہ کیا ہو (ابن ماجہ ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔مومن جب کوئی گناہ کرتا ہے تو اس کے دل پر ایک سیاہ نشان بن جاتا ہے ،پھر اگر وہ توبہ کر لے اور گناہ سے ہٹ جائے ،استغفار کرے ،تو اس کا دل صاف ہو جاتا ہے (ترمذی ،ابن ماجہ )
()۔۔۔۔۔۔دلوں کے زنگ کا علاج استغفار ہے (شعب الایمان ،ترغیب و ترہیب ،طبرانی صغیر )
()۔۔۔۔۔۔جو شخص پابندی سے استغفار کرتا ہے اللہ تعالی اسے ہر غم و مشکل سے نجات دلاتا ہے ،اسے وہاں سے رزق دیتا ہے ،جہاں سے اسے گمان بھی نہیں ہوتا (ابوداؤد ،ابن ماجہ ،مستدرک )
()۔۔۔۔۔۔عبادت گزار پر عالم کی فضیلت ایسے ہی ہے جیسے چودھویں رات کے چاند کی فضیلت تمام ستاروں پر ہے (ترمذی ،ابوداؤد ،دارمی ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔ایک فقیہ شیطان پر ایک ہزار عبادت گزاروں سے زیادہ سخت اور بھاری ہے (ترمذی ،ابن ماجہ )
()۔۔۔۔۔۔اللہ کا ذکر کرنے والے اور نہ کرنے والے کی مثال زندہ اور مردہ کی طرح ہے(بخاری ،مسلم )
()۔۔۔۔۔۔جن لوگوں کی زبانیں ہمیشہ ذکر اللہ سے تررہتی ہے ،وہ مسکراتے ہوئے جنت میں داخل ہو جائیں گے (مصنف ابن ابی شیبہ ،حلیۃ الاولیاء ،صفوۃ الصفوۃ ،درمنثور)
()۔۔۔۔۔۔جو مجھ پر ایک مرتبہ درود بھیجتا ہے ،تو اللہ اس پر دس رحمتیں نازل فرماتا ہے ،دس گناہ معاف فرماتا ہے ،اس کے دس درجات بلند کرتا ہے (نسائی ،ادب المفرد،مسند احمد ،مستدرک )
()۔۔۔۔۔۔(ظاہری وفات کے بعد بھی ) میں ہر سلام کرنے والے کے سلام کا جواب دیتا ہو ں (ابوداؤد ،مسند احمد ،شعب الایمان )
()۔۔۔۔۔۔دعا آسمان و زمین کے درمیان ٹھہری رہتی ہے جب تک تم اپنے نبی پر دورد نہ پڑھ لو (ترمذی ،ترغیب )
()۔۔۔۔۔۔مجھ پر دورد پڑھا کرو ،بے شک مجھ پر درود پڑھنا تمہارے لیے پاکیزگی کا باعث ہے (مصنف ابن ابی شیبہ ،مسند ابی یعلی )
()۔۔۔۔۔۔ہررات ایک ساعت ایسی ہوتی ہے جس میں انسان دنیا و آخرت کی جو بھی چیز مانگے اللہ تعالی اسے عنایت فرماتا ہے (مسلم ،مسند احمد ،ترغیب ،مسند ابی یعلی )
()۔۔۔۔۔۔رات کا قیام رب کی قربت کا باعث ،برائیوں کو مٹانے والا ،گناہوں سے روکنے والا ہے (ترمذی،مستدرک ،طبرانی کبیر )
()۔۔۔۔۔۔کثرت سے سلام کیا کرو ،کھانا کھلایا کرو ،خونی رشتوں کے ساتھ بھلائی کیا کرو ،اورراتوں کو اٹھ کر نماز پڑھا کرو (ترمذی ،ابن ماجہ ،مسند احمد )
()۔۔۔۔۔۔میں تمھیں زیارت قبور سے منع کرتا تھا ،اب حکم دیتا ہوں زیارت قبور کیا کرو ،کیونکہ یہ دنیا سے بے رغبت کرتی ہے ،اور آخرت کی یاد دلاتی ہے(ترمذی )
()۔۔۔۔۔۔موت کے بعد بھی تین چیزیں فائدہ دیتی ہیں ،صدقہ جاریہ ،ایسا علم جس نے فائدہ اٹھایا جائے ،نیک اولاد جو اس کے لیے دعا کرے
(مسلم ،ابوداؤد ،ابن ماجہ ،ابن حبان ،ابن خزیمہ ،مسند احمد ،شعب الایمان ،طبرانی اوسط )
الحمد ﷲ قد تم عد د الاربعین ٢٠١٥۔٠٦۔٧٢ طالب الدعا غلام نبی ؐ


No comments:

Post a Comment

Join us on

Must click on Like Button

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...