Thursday, March 23, 2017

وضو کے چھ مکروھات

وضو کے مکروھات:
وضو کرنے والے کے لیے چھ چیزیں مکروہ ھیں:
1-پانی ضرورت سے زیادہ خرچ کرنا .
2-پانی ضرورت سے کم خرچ کرنا.
3-پانی زور سے منہ پر مار مارنا .
4-دنیاوی باتیں کرنا.
5-بغیر کسی عذر کے دوسرے سے مدد لینا .
6-نئے پانی کے ساتھ تین بار مسح کرنا.

"نور الایضاح ،امام شرنبلالی  "

ويكره للمتوضئ ستة أشياء:
١ - الإسراف في الماء.
٢ - والتقتير فيه

٣ - وضرب الوجه به.
٤ - والتكلم بكلام الناس.
٥ - والاستعانة بغيره من غير عذر.
٦ -وتثليث المسح بماء جديد
"نور الایضاح ،للشرنبلالی"
wuzu k makrohat
islami taleem

ھماری بے حسی اور بے رحم غربت:

ھماری بے حسی:
تحریر: احسان اللہ کیانی
یتیم بچے سارا دن بھوک سے تڑپتے ھیں .....تو کیا ھوا؟
بیوہ قرض لے لے کر گزارہ کرتی ھے ....تو کیا ھوا؟
مزدود کا مزدوری سے گزارا نھیں ....تو کیا ھوا؟
غریب کی ریڑھی اس کے بچوں کا پیٹ نھیں بھرتی  ...تو کیا ھوا؟
نوجوان کے پاس معمولی کاروبار کا بھی پیسہ نھیں...تو کیا ھوا؟
غریب کے بچےکے پاس ھنر نھیں ...تو کیا ھوا؟
علماء کا کم  تنخواہ میں گزارہ نھیں ........ تو کیا ہوا؟
طلبا کتب خریدنے کی بھی استطاعت نھیں رکھتے ........ تو کیا ہوا؟
ہمارے دینی طلبا ہلکے کمبل اوڑھ کر سردیوں میں ساری رات ٹھٹھرتے  ہیں ........ تو کیا ہوا؟

#Gurbat

پاکستان کا مختصر تعارف

پاکستان کا مختصر تعارف
تحریر :احسان اللہ کیانی

پاکستان کا لفظی مطلب :
پاکستان کے لفظی معنی پاک لوگوں کی سر زمین ہے۔
پاک کے اردو اور فارسی میں معنی خالص اور صاف کے ہیں اور ستان کا مطلب زمین یا وطن کا ہے۔

شعار  :ایمان ،اتحاد ،تنظیم

نظام حکومت : وفاقی پارلیمانی جمھوری ریاست

رقبہ  :۸۸۰۲۵۴مربع کلو میٹر
یہ رقبہ کے اعتبار سے دنیا کا چھتیسواں بڑا ملک ہے

محل وقوع کی اہمیت :
اسلامی جمہوریہ پاکستان جنوبی ایشیاء کے شمال مغرب میں واقع ہے ، وسطی ایشیا اور مغربی ایشیا کے لئے دفاعی طور یہ ملک بڑی اہمیت کا حامل ہے۔

آبادی:
بیس کروڑ کی آبادی کے ساتھ یہ دنیا کا چھٹا بڑا آبادی والا ملک ہے۔

پاکستانی علاقے دور قدیم میں :
موجودہ پاکستان کے علاقوں پر یونانی، ایرانی ،عرب،ہندو، سکھ، افغان، منگول اور ترک حملہ آوروں کی حکومت بھی رہی ہے۔

یہ علاقہ مختلف سلطنتوں جیسے موریا، ہخامنشی سلطنت ،عربوں کی خلافت امویہ، مغول سلطنت، مغلیہ سلطنت، درانی سلطنت، سکھ سلطنت اور برطانوی راج کا اہم حصہ رہا ہے۔

پاکستان قانون :
پاکستان نے 1956ء میں اپنا پہلا قانون اپنایا۔

پاکستان کا مشرقی حصہ :
1971ء میں ایک خانہ جنگی کے دوران اس کا مشرقی حصہ الگ ہو کر ایک نیا ملک بنگلہ دیش بن گیا۔
اس وجہ سے پاکستان سے دنیا کی سب سے بڑی اسلامی سلطنت ہونے کا اعزار جاتا رہا ۔

پاکستان کی طاقت:
پاکستان دنیا کا ایک طاقتور ملک ہے،  اس کی فوج دنیا کی ساتویں بڑی فوج ہے اور یہ اسلامی دنیا کی واحد ایٹمی طاقت ہے۔

محمد بن قاسم اور پاکستان :
سات سو گیارہ عیسوی میں محمد بن قاسم نے پاکستان اور ہندوستان کے خاصے حصے کو فتح کر لیا تھا ۔
اس وقت یہ دنیا کی سب سے بڑی عرب ریاست کا حصہ بن گیا تھا ،اس وقت اسکی زبان عربی اور مذھب اسلام تھا ۔

برصغیر سے پاکستان تک :
ہندوستان کی انگریزوں سے آزادی کی تحریک کے دوران ہندوستان کے مسلمانوں نے اپنے لیے ایک علیحدہ ملک کا مطالبہ کیا۔

اس تحریک کا نعرہ تھا :
"پاکستان کا مطلب کیا لا الہ الا اللہ" اس مطالبے کے تحت تحریک پاکستان وجود میں آئی۔ اس تحریک کی قیادت محمد علی جناح نے کی۔ 14 اگست 1947ء کو پاکستان وجود میں آیا۔

پاکستان بلکہ تمام اسلامی ممالک کی خیر خواھی فرض ھے

#پاکستان بلکہ تمام اسلامی ممالک کی #خیر_خواھی ھر  #مسلمان پر شرعا #فرض ھے .
یا اللہ تمام اسلامی ممالک کی حفاظت فرما اور مسلمانوں کو دنیا پر #غلبہ عطا فرما.
#Pakistan #PakArmy #23March

سیکولر طبقے سے ایک سوال

سوال:فرعون نے #لاکھوں #بچے #مذھب کی وجہ سے #قتل کروائے تھے یا اپنی #حکومت اور #سیکولر_سٹیٹ بچانے کے لیے..؟؟
  #Secular_State #secularism #secular

Wednesday, March 22, 2017

بے نمازی کی سزا احادیث کی روشنی میں

نماز چھوڑنے والے متوجہ ہوں :
نبی کریم علیہ السلام نے فرمایا :

من حَافظ عَلَيْهَا كَانَت لَهُ نوراً وبرهاناً وَنَجَاة يَوْم الْقِيَامَة وَمن لم يحافظ عَلَيْهَا لم تكن لَهُ نوراً وَلَا برهاناً وَلَا نجاة يَوْم الْقِيَامَة وَكَانَ يَوْم الْقِيَامَة مَعَ فِرْعَوْن وَقَارُون وهامان وَأبي بن خلف

جس نے نماز کی محافظت کی اس کے لیے قیامت کے دن نور ،برھان اور نجات ہو گی ،
اور جس نے نماز کی محافظت نہ کی ،اس کے لیے قیامت کے دن نہ نور ھو گا ،نہ برھان اور نہ نجات ھو گی ،
اور وہ قیامت کے دن فرعون ،قارون ،ھامان اور ابی بن خلف کے ساتھ ھو گا ۔

(کتاب الکبائر ،امام ذھبی ،ص۱۹،دارالندوۃ الجدیدۃ ،بیروت )

حدیث شریف میں ہے :
مَنْ تَرَكَ الصَّلَاةَ مُتَعَمِّدًا كَتَبَ اللَّهُ اسْمَهُ عَلَى بَابِ النَّارِ مِمَّنْ يَدْخُلُهَا

جس نے جان بوجھ کر ایک نماز چھوڑی ،
اللہ تعالی اس کا نام جھنم کے اس دروازے پر لکھ دے گا ،جس سے اس نے جھنم میں داخل ہونا ہے ۔

(الزواجر  عن اقتراف الکبائر ،امام ابن حجر ھیتمی ،ج۱،ص ۲۱۹،دارالفکر ،بیروت )

حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ کا مختصر تعارف

حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ کا مختصر تعارف
تحریر :احسان اللہ کیانی
نام :عبد اللہ
کنیت :ابو بکر
لقب: عتیق
تاریخ ولادت :573 عیسوی

والد :عثمان بن عامر
والد کی کنیت :ابو قحافہ

والدہ کا نام :سلمی بنت صخر
والدہ کی کنیت :ام الخیر

حالات زندگی :
آپ اعلان نبوت سے پھلے بھی نبی کریم علیہ السلام کے دوست تھے ،آپ رضی اللہ عنہ نبی کریم علیہ السلام سے تین سال چھوٹے تھے ۔

دعوت دین :
آپ کی دعوت سے بھت سے لوگوں نے اسلام قبول کیا ،ان میں سے پانچ صحابہ وہ ہیں ،جنھیں نبی کریم علیہ السلام نے دنیا میں جنت کی بشارت دی ۔
ان کے نام یہ ہیں
حضرت عثمان بن عفان
حضرت زبیر بن عوام
حضرت عبد الرحمن بن عوف
حضرت سعد بن ابی وقاص
حضرت طلحہ بن عبید اللہ
رضی اللہ عنھم

وفات:
۲۲ جمادی الآخر ۱۳ ھجری
634عیسوی 
یہ تمام باتیں علامہ محمد رضا صاحب کی عربی کتاب "ابو بکر الصدیق اول الخلفاء الراشدین "سے اخذ کی گی ہیں ۔

مناقب:
نبی کریم علیہ السلام نے فرمایا :
"ابوبکر عتیق اللہ من النار "
ابوبکر جھنم سے اللہ تعالی کے آزاد کردہ بندہ ہیں ۔
(مستدرک )

نبی کریم علیہ السلام نے فرمایا :
وَلَوْ كُنْتُ مُتَّخِذًا خَلِيلًا لَا تَّخَذْتُ أَبَا بَكْرٍ خَلِيلًا وَلَكِنَّهُ أَخِي وَصَاحِبِي
اگر میں کسی کو دنیا میں خلیل بناتا ،تو ابوبکر کو بناتا ۔لیکن وہ میرے صحابی اور میرے دینی بھائی ہیں ۔
(صحیح مسلم )

قال شارح المشکوۃ :زاد احمد :اخی فی الدین

نبی کریم علیہ السلام سے پوچھا گیا :
أَيُّ النَّاسِ أَحَبُّ إِلَيْكَ؟ قَالَ: «عَائِشَةُ» .
آپ کو لوگوں میں سے کون سب سے زیادہ پسند ہے ۔آپ علیہ السلام نے فرمایا :حضرت عائشہ
پوچھا گیا :اور مردوں میں سے کون سب سے زیادہ پسند ہے ۔
آپ نے فرمایا :
ان کے باپ یعنی حضرت ابو بکر صدیق
(بخاری ،مسلم )

Tuesday, March 21, 2017

گدی نشین اور علم

گدی نشین اور علم:
باپ کا علم نہ بیٹے کو اگر از بر ھو
پھر پسر قابلِ میراث پدر کیونکر ھو
علامہ اقبال

وضاحت:
اَز بَر : یاد
پسر : بیٹا
پدر : باپ

نبی کریم علیہ السلام کے حاضر ناظر ھونے کا یہ مطلب نہیں

مسئله_حاضر_و_ناظر:
#نبی_کریم علیه السلام کے #حاضر_ناظر ھونے کا یه معنی نھیں ھے ,که وه ھر وقت ھر جگه موجود ھوتے ھیں.
"نعمة الباری,ج7,ص117"

#توجه_طلب:
یه کتاب #صحیح_بخاری_کی_شرح ھے ,جو 16 جلدوں میں ,ایک سنی عالم #علامه_غلام_رسول_سعیدی صاحب نے لکھی ھے .
#islam #bukhari #barelvi #hazir_nazir

کرکٹ وقت کاضیاع

قرآن کریم میں ھے:
"اِقۡتَرَبَ لِلنَّاسِ حِسَابُہُمۡ وَ ہُمۡ فِیۡ غَفۡلَۃٍ  مُّعۡرِضُوۡنَ "
لوگوں کے حساب کا وقت قریب آگیا ھے، پھر بھی وہ بے خبری میں منہ پھیرے ہوئے ہیں ۔
"الانبیاء:1"

توجہ طلب:
ھم کھیل کود کے لیے نھیں ،بلکہ اللہ کی عبادت کے لیے پیدا کیے گئے ھیں .
اس لیے ھمیں اپنی قیمتی زندگی کا کوئی لمحہ بھی کھیل کود میں ضائع نھیں کرنا چاھیے .

Follow My Facebook Account

Join us on

LinkWithin

Related Posts Plugin for WordPress, Blogger...